بنیادی صفحہ / سخن / توحید اور سماج

توحید اور سماج

 

اولاََ یہ چند باتیں عرض ہیں تمہید میں
درحقیقت ابتدا انساں کی ہے توحید میں
سب معاشی مشکلوں کا حل بھی ہے توحید میں
ہے سیاست کی دوا مضمر اسی توحید میں
الغرض سب مشکلوں کا حل فقط اسلام ہے
ہے یہ دولت تو امانت درحقیقت اصل بات
جو ہوس کے ہوں پجاری‘دے دی ہے ان سب کو مات
سب معاشی کاوشوں کا ماحصل بھی ہو نجات
دیکھو ہے بے روزگاری‘ مفلسی کا حل زکات
الغرض سب مشکلوں کا حل فقط اسلام ہے
ہے سبق انسان کو انسان کی عزت کرے
سب مساوی ہیں بنی آدم سدا وحدت رہے
سب کا خالق ایک ہے‘ روگ کدورت نہ رکھے
بندگی اللہ کی ہوگی تو نصرت ہی ملے
الغرض سب مشکلوں کا حل فقط اسلام ہے
ہے حکومت فرد کی یاقوم کی بے سود بات
حاکمیت ہر طرح مخلوق کی ہے بے ثبات
حاکم مطلق ہے بس اللہ کی بے عیب ذات
ختم کرتے ہیں مذکر بس اسی پہ اپنی بات
الغرض سب مشکلوں کا حل فقط اسلام ہے
سید احمد مذکر، چنئی

تعارف: admin

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

x

Check Also

ادب اسلامی

پروفیسر محسن عثمانی ندوی ادب کا اسلام سے گہرا رشتہ ہے بلکہ ...