بنیادی صفحہ / سخن (صفحہ 2)

سخن

لہوپکارے گاآستیں کا

شیخ احمدضیاء مرزا نے آج آتے ہی بڑے رازدارانہ لہجہ میں ہم سے کہا میاں!آج ہم نے ایک عجیب خواب دیکھاہے۔ اگرتم واقعی سیریس ہوتو میں اس خواب کے بارے میں کچھ سنائوں گاورنہ نہیں۔ہم نے کہا مرزا خواب تمہارا۔ ...

مزید پڑھیں »

غزل

پروفیسر شاہد ذکا ء اللہ میری زندگی میرا بانکپن میری ہر خوشی کا حساب کیوں میرے ہم نشیں میرے روز و شب میری دوستی کا حساب کیوں میری فکر ہے میری سوچ ہے میرا درد ہے میری آرزو میرے آنسوئوں ...

مزید پڑھیں »

غزل

آسیب سا جیسے مرے اعصاب سے نکلا یہ کون دبے پاؤں مرے خواب سے نکلا سینے میں دبی چیخ بدن توڑ کے نکلی یادوں کا دھواںروح کے محراب سے نکلا جب جال سمیٹا ہے مچھیرے نے علی الصّبح ٹوٹا ہوا ...

مزید پڑھیں »

نطم

آئیے خواب کی تعبیر کریں اپنا گھر آپ ہی تعمیر کریں وہ جو احسان کیے جاتے ہیں عین ممکن ہے کہ تقصیر کریں چاند تاروں پہ پہنچ سے بہتر اپنی دنیا ہی کی تسخیر کریں رامش ورنگ کے قبضے میں ...

مزید پڑھیں »

غزل

چھپانے کا غم اب جگر چاہیے خوشی بانٹنے کا ہنر چاہیے پڑھیں صرف تسبیح اہلِ خرد جنوں کا تقاضا ہے سر چاہیے جو کہتے ہو اس کو کرو خود بھی تم جو باتوں میں تم کو اثر چاہیے شبِ ہجر ...

مزید پڑھیں »

اگر ضمیر کی چڑیاحلال کردیتے

عبدالحفیظ ۔ر،تلنگانہ   مرزا کا چھینکتے چھینکتے براحال تھا۔ ہم نے پوچھا ’’کیوں پریشان ہو کیا حال بنارکھاہے ،،کہنے لگے میاں تمہیں مذاق سوجھتا ہے اور ادھر ہماری جان نکلی جارہی ہے۔ گھر کا ہر فرد ہی نہیں بلکہ سارا ...

مزید پڑھیں »

شہادت نظامی

ادب سے اس نعش کو اُتارو یہ لاشہ رحمان کا مطیع ہے یہ پھول چہرہ، بہت حسیں ہے مجھے تو ایسے ہی لگ رہا ہے کہ جیسے پیارا سا کوئی بچہ اُتر کے جھولے سے سو گیا ہو سکوں کی ...

مزید پڑھیں »

غزل

نگا ہیں تیز ہوں تو پھر نشانا خوب لگتا ہے زمانہ ساتھ اسکے ہے جو اسکے ساتھ چلتا ہے بہت رونا اگرآیا تو خود کی بات پر آیا جہاں میں غیر کی خاطر بھلا اب کون روتا ہے پرندے قید ...

مزید پڑھیں »

ہم مسلمان ہیں

ہم سبھی کا خدا ایک رحمن ہے ہے نبی ایک اور ایک قرآن ہے آپکا جو وہ میرا بھی ایمان ہے صرف اخلاق ہی اپنی پہچان ہے یہ نہ بھولو مگر ہم مسلمان ہیں ہم مسلمان ہیں بس مسلمان ہیں ...

مزید پڑھیں »

اعتراف حقیقت

(حالات حاضرہ کے تناظر میں) میں مسلمان ہو ں اور فخر سے یہ کہتا ہوں تیرے سینے میں ہمیشہ سے مگر رہتا ہوں فکرصالح ہے میری، عزم جواں ہے میرا ہر بلا ، ظلم وستم، ہنس کے مگر سہتا ہوں ...

مزید پڑھیں »