بنیادی صفحہ / سخن / ہم مسلمان ہیں

ہم مسلمان ہیں

ہم سبھی کا خدا ایک رحمن ہے
ہے نبی ایک اور ایک قرآن ہے
آپکا جو وہ میرا بھی ایمان ہے
صرف اخلاق ہی اپنی پہچان ہے

یہ نہ بھولو مگر ہم مسلمان ہیں
ہم مسلمان ہیں بس مسلمان ہیں

مسلکی اختلا فات ا پنی جگہ
سارے جھگڑے فسادات اپنی جگہ
رسم کہنہ روایات اپنی جگہ
تفرقہ کی ہر ایک بات اپنی جگہ

یہ نہ بھولو مگر ہم مسلمان ہیں
ہم مسلمان ہیں بس مسلمان ہیں

دوری قرآن سے اپنی بڑھتی گئی
اور فرائض سے امت یہ کٹتی گئی
پھرامامت کے منصب سے ہٹتی گئی
کتنے فرقوں میں جانے یہ بٹتی گئی

یہ نہ بھولو مگرہم مسلمان ہیں
ہم مسلمان ہیں بس مسلمان ہیں

ہم تو اپنوں ہی اپنوں سے کٹتے گئے
اور فرقوں میں ہم یوں ہی بٹتے گئے
ہم بھی کاشفؔ زمانے سے مٹتے گئے
بادلوں کی طرح ہم بھی چھٹتے گئے

یہ نہ بھولو مگر ہم مسلمان ہیں
ہم مسلمان ہیں بس مسلمان ہیں

 

از: اشعر الدین کاشفؔ

تعارف: admin

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

x

Check Also

غزل

حق بات جب سے سب کو سنانے میں لگ گیا سارا جہان ...