Home / خبر / ہریانہ کے فرضی انکاؤنٹرس پر تحقیقات کا مطالبہ – ایس آئی او

ہریانہ کے فرضی انکاؤنٹرس پر تحقیقات کا مطالبہ – ایس آئی او

 

ہریانہ کے سلسلہ وار فرضی انکاؤنٹرس کی مستحکم عہدیداروں کے ذریعہ شفاف اور غیر جانبدارانہ تحقیقات کا نحاس مالا قومی صدر اسٹوڈنٹس اسلامک آرگنائزیشن آف انڈیا نے مطالبہ کیا. ان میں سے گیارہ واقعات جو ضلع نوح کے ہیں اور تازہ ترین معاملہ جو کہ “منفید” نامی لڑکے کے ساتھ پیش آیا. “citizen against hate” نے کہا کہ حقائق پر مبنی رپورٹ کے مطابق ‘منفید’ کو پولیس عہدیداروں نے طلب کیا اور پولیس کی مخبری کرنے پر تمام فرضی الزامات سے بری کرنے کی پیشکش کی. بعد میں اسے قتل کردیا گیا.

رپورٹ میں ریاست میں ہوئے 15 ایسے واقعات کی فہرست ہے. ہریانہ کے فرضی انکاؤنٹرس کی ان خبروں کا بٹلہ ہاؤز انکاؤنٹر کی سالگرہ کے موقع پر ہی منظر عام پر آنا محض اتفاق نہیں ہوسکتا.

یہ ظاہر کرتا ہے کہ ہمارا سسٹم کتنا متعصب ہے. اس کے علاوہ ملک کے مسلمان بالخصوص نوجوان ان فرضی انکاؤنٹرس کا شکار ہیں.

انھوں نے مزید کہا کہ فرضی انکاؤنٹرس کے ان معاملوں میں انصاف کبھی نہیں ملا جس کہ بہترین مثال بٹلہ ہاؤس انکاؤنٹر ہے.

About admin

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*

x

Check Also

ہندوستان میں پہلی بار IRI اور CERT اسلامی تعلیمات کے ذریعہ سماج میں پائیدار ماحولیات اور وسائل کے صرف و پیداوار کے لئے بیداری لارہی ہے.

نئی دہلی (15 نومبر، 2017): انسانی زندگی کی بقا کے لئے قدرتی ...