بنیادی صفحہ / سخن / کوئی تو بتائے۔ ۔ ۔
Landscapes Trees Birds Art Lakes Sunset Nature Animals Drawing Orange Desktop Picture

کوئی تو بتائے۔ ۔ ۔

یہ رستے، یہ گلیاں، یہ سنسان راہیں
یہ سب کا کنارہ کہیں پر تو ہوگا
کہاں سے شروع اور کہاں پر ختم ہے
یہ سب کا پتہ تم کسی کو تو ہوگا
یہ بنتے ہیں کیسے کوئی تو بتائے

میری آنکھ میں جو یہ پانی کے قطرے
بِنا بادلوں کے یہ آتے ہیں کیسے
کیا بجلی کھڑکنے کی آواز آئی
یہ شبنم کی بوندوں کا میلہ لگا ہے
یہ آتے ہیں کیسے کوئی تو بتائے

یہ کونپل جو مٹی سے یوں جھانکتی ہے
کہ جیسے یہ دنیا اسی کے لئے ہے
یہ کونپل سے بنتا ہے چھوٹا سا پودا
اور پودے سے ایک پیڑ بنتا ہے کیسے
یہ بڑھتا ہے کیسے کوئی تو بتائے

کھلے آسمانوں میں اڑتے پرندے
تعین یہ سمتوں کا کرتے ہیں کیسے
ہر ایک شام گھر پر یہ واپس ہیں آتے
پتہ اپنے گھر کا یہ رکھتے ہیں کیسے
یہ کرتے ہیں کیسے کوئی تو بتائے

عدنان شبیبی

تعارف: admin

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

x

Check Also

ادب اور تحریک اسلامی

ڈاکٹر شاہ رشاد عثمانی تحریر بضمن ادبی اشاعت ادب، تحریک اور اسلام ...